• تاریخ: 2011 نومبر 19

حج کا فلسفہ


           



قال علی (ع:(

جَعَلَہُ سُبْحَانَہُ عَلاٰمَةً لِتَوَاضُعِھِمْ لِعَظَمَتِہِ و اَذعانَھُمْ لِعِزَّتِہِ”۔[ ۱
حضرت علی (ع)نے فرمایا:
خدا وند عالم نے کعبہ کے حج کو علامت قرار دیا ھے تاکہ لوگ اس کی عظمت کے سامنے فروتنی کا اظھارکریں اور پروردگار عالم کے غلبہ نیز اس کی عظمت و بزرگواری کا اعتراف کریں ”۔
قال علی (ع:(
[ ”جَعَلَہُ سُبْحَانَہُ لِلْإِسْلاٰمِ عَلَماًوَلِلْعَائِذِینَ حَرَماً”۔[ ۲
حضرت علی (ع)نے فرمایا:
خدا وند عالم نے حج اور کعبہ کو اسلام کا نشان اور پرچم قرار دیا ھے اور پناہ لینے والے کے لئے اس جگہ کو جائے امن بنایا ھے”۔دین کی تقویت کا سبب
قال علی (ع:(
۔۔۔وَالْحَجَّ تَقْوِیَةً لِلدِّینِ[ ۳
حضرت علی (ع)نے فرمایا:
۔۔۔اورحج کو دین کی تقویت کا سبب قرار دیاھے”۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

 

[۱] نھج البلاغہ :خ۱

[۲] وسائل الشیعہ:۱۱/۱۵۔نھج البلاغہ:خ۱۔

[۳] نھج البلاغہ :خ۱۔

 

Copyright © 2009 The AhlulBayt World Assembly . All right reserved