• تاریخ: 2012 ستمبر 02

روزہ تطہیر زبان


           

یوں تو روزہ کی حالت میں زبان کے تمام غلط استعمالات جھوٹ، غیبت، بہتان گالم گلوچ ، چلغخوری وغیرہ سب ہی حرام ہیں لیکن ایک جھوٹ ایسا بھی ہے جو روزہ کو باطل بھی کر دیتا ہے اور وہ ہے خدا، رسول اور معصومین (ع) کی طرف کسی ایسی بات کا منسوب کرنا جو انہوں نہ فرمائی ہو اور یہ قانون جہاں انسان کو جھوٹ سے روکتا ہے وہاں تحقیق کی دعوت بھی دیتا ہے کہ کسی کی طرف بات کو منسوب کرنے سے پہلے تحقیق کرو کہ اس نے بات کہی ہے یا نہیں کہی ہے۔ اگر نہیں کہی ہے تو تمہیں نسبت دینے کا کوئی حق نہیں ہے کہ اس نظام بندگی کے برباد ہونے کا اندیشہ ہے۔ گویا روزہ انسان کو احساس دلاتا ہے کہ اپنی زبان کو پاکیزہ رکھو اور بغیر تحقیق کے کائی بات نہ کہو اور پہلے اپنی زبان سے بزرگ ترین ہستیوں کو محفوظ رکھو تاکہ دوسرے افراد کے احترام کا سلیقہ پیدا ہو۔

ماخوذ از کتاب اصول و فروع علامہ جوادی 

Copyright © 2009 The AhlulBayt World Assembly . All right reserved