روزانہ کی حدیث
« اِنَّ قَلِیلَ العَمَلِ مَعَ العِلمِ کَثِیرٌ وَ کَثِیرَ العَمَلِ مَعَ الجَهلِ قَلِیلٌ »
نهج الفصاحه ، حدیث 873
کار اندک که با بصیرت و دانش انجام گیرد بسیار است و کار بسیار که با نادانی صورت پذیرد اندک است .
  • تاریخ: 2013 جنوری 28

رسول کی شفاعت محبان اہل بیت سے مخصوص ہے


           

 

 

اخرج الخطیب فی تاریخہ ،عن علیؓ ؛ قال: قال رسول اﷲ [ص] :(( شفاعتی لامتی من احب اہل بیتی))
خطیب بغدادی (۱)اپنی تاریخ میں علیؓ سے نقل کرتے ہیں کہ رسول ؐنے فرمایا : میری امت میں جومیرے اہل بیت کو دوست رکھے گا میری شفاعت اسی کے نصیب ہوگی ۔(۲) 


رسول خدا سب سے پہلے اپنے اہل بیت کی شفاعت کریں گے 
اخرج الطبرانی ،عن ابن عمر ؛ قال: قال رسول اﷲ [ص] :(( اول من اشفع لہ من امتی اہل بیتی ))
طبرانی نے عبد اﷲ ابن عمرسے نقل کیا ہے کہ رسول خدا [ص] نے فرمایا : سب سے پہلے جس کی میں شفاعت کروں گا وہ میرے اہل بیت ہوں گے ۔ (۳)
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
اسناد و مدار ک کی تحقیق :
(۱)ابو بکر احمد بن علی بن ثابت بن احمد بن مہدی بغدادی معروف بہ خطیب بغدادی ؛ موصوف ۳۹۲ ؁ ھ میں غزیۃ ( کوفہ اور بغداد کے درمیان ایک دیہات ) میں پیدا ہوئے ،آپ ۴۶۳ ؁ ھ کو وفات پاگئے، آپ کی بغدا دمیں ہی پرورش ہوئی ، علم دین کی تلاش میں مکہ ، بصرہ ، دینور،کوفہ اور دیگر شہروں کی جانب سفر کئے ، آپ ایک بہت بڑے عالم ، ادیب ، شاعر اور بیحد مطالعہ کے شوقین تھے ، آپ نے متعددکتابیں تالیف فرمائی ہیں، ان میں سے کچھ یہ ہیں : 
تاریخ بغداد ، الجامع ، الکفایہ ، اور المتفق والمفترق ۔ 
(۲) مذکورہ حدیث کو خطیب بغدادی نے اس طرح نقل کیا ہے : 
’’شفاعتی لامتی من احب اہل بیتی وہم شیعتی ‘‘
میری شفاعت میری امت کے ان افراد کو شامل ہوگی جو میرے اہل بیت سے محبت کریں گے وہ میرے شیعہ ہیں .
دیکھئے : کنز العمال ج ۶،ص۲۱۷۔ الجامع الصغیر ج۲،ص ۴۹۔ ینابیع المودۃ ص ۱۸۵۔ 
(۳)مذکورہ حدیث حسب ذیل کتابوں میں میں بھی پائی جاتی ہے :
محب الدین طبری ؛ ذخائر العقبی ص۲۰۔ کنز العمال ج ۶،ص۲۱۵۔ الصواعق ا لمحرقۃ ص۱۱۱۔ مجمع الزوائد ج۱،ص۲۸۰۔ مناوی ؛ فیض القدیر ج۲ص۹۰۔

ماخذ: کتاب "احیاء ا لمَیْتْ بفضائل اہل البیتْ [ع]" ,علامہ شیخ جلال الدین سیوطی 

ترجمہ ، محمد منیرخان ہندی لکھیم پوری .مجمع جہانی اہل البیت علیہم السلام 

 

Copyright © 2009 The AhlulBayt World Assembly . All right reserved